Home Urdu News مرنے اور رزق کا خوف انسان کو چھوٹا بنا دیتا ہے، جب تک اس خوف کے بت کو نہیں توڑا جائے گا،یہ قوم عظیم نہیں بنے گی

مرنے اور رزق کا خوف انسان کو چھوٹا بنا دیتا ہے، جب تک اس خوف کے بت کو نہیں توڑا جائے گا،یہ قوم عظیم نہیں بنے گی

0
مرنے اور رزق کا خوف انسان کو چھوٹا بنا دیتا ہے، جب تک اس خوف کے بت کو نہیں توڑا جائے گا،یہ قوم عظیم نہیں بنے گی

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے کہا ہے کہ میں یہاں آیا تو پیغام آیا کہ شیشہ لگا لو، آپ کی جان خطرے میں ہے۔ملتان میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مرنے اور رزق کا خوف انسان کو چھوٹا بنا دیتا ہے، جب تک اس خوف کے بت کو نہیں توڑا جائے گا،یہ قوم عظیم نہیں بنے گی۔انہوں نے کہا کہ میری قوم کسی سپرپاور،چور اور ڈاکووں کے سامنے نہیں جھکی، ہمیشہ دعا مانگی میری قوم جاگ جائے۔عمران خان نے کہا کہ ہمیں کرپٹ اور بزدل حکمرانوں نے خوف دلایا ہوا ہے کہ جب تک امریکہ کے جوتے پالش نہیں کریں گے، آگے نہیں بڑھ سکتے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمارے حکمرانوں کی وجہ سے قوم کو ذلت ملی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم عظیم قوم ہیں، اوپر ایسے حکمران ہیں جس کی وجہ سے یہ قوم عظیم نہیں بن پائی۔انہوں نے کہا کہ اللہ سے دعا کرتا تھا کہ کبھی اپنی قوم کو کسی کے سامنے نہیں جھکنے دوں گا۔جلسے سے قبل اپنے بیان میں عمران خان نے کہا تھا کہ الیکشن کی تاریخ تک انسانوں کا سمندر اسلام آباد سے نہیں جائے گا، ہم امپورٹڈ حکومت نہیں جلد الیکشن چاہتے ہیں، اسلام آباد مارچ کا مقصد حقیقی آزادی ہے۔گزشتہ روز چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے اسلام آباد میں عوام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم انتخابات کے ذریعے تبدیلی چاہتے ہیں اور جب تک ہمیں شفاف انتخابات کی تاریخ نہیں ملے گی ہم اسلام آباد سے جانے والے نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ برصغیر کی تاریخ میں سب سے بڑا انسانی سمندر اسلام آباد آنے والا ہے اور اسلام آباد مارچ سے پہلے ملتان کا جلسہ آخری ہے اور اسلام آباد مارچ کا مقصد حقیقی آزادی ہے۔ لوگ اسلام آباد مارچ کے لیے جوش اور توانائی بچائیں۔عمران خان نے کہا کہ اپنی قوم کو دوسروں کے لیے قربان نہیں کیا جاسکتا اور ہم امپورٹڈ حکومت نہیں بلکہ جلد الیکشن چاہتے ہیں۔

Education Template