فردوس عاشق اعوان نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ن لیگی قیادت قول وفعل کے تضاد کی زندہ مثال ہے، شہبازشریف کورونا کے ڈرسے نیب کی تحقیقاتی ٹیم کوجواب دینے کو تیار نہیں لیکن سیکڑوں پارلیمنٹیرینز کی موجودگی میں اجلاس طلب کرنے پربضد ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایک وقت میں 2 مختلف بیانیوں کی مانند ان کے مؤقف آج بھی مختلف ہیں، ان کا موقف اور بیانیہ اپنی سہولت اور منشا کے مطابق بدلتا رہتا ہے، عوام ان کے دوغلے پن سے بیزار ہیں۔

وزیراعظم کی معاون خصوصی نے کہا کہ اپوزیشن مساجد کھلنے پر اعتراض کرتی ہے لیکن پارلیمنٹ کھولنے کے لیے بیتاب ہے۔

انہوں نے مزیدکہا کہ اجلاس بلانا اسپیکر کا استحقاق ہے، حکومت کو کوئی اعتراض نہیں ہے۔

اپوزیشن کو مساجد کے کھلنے پہ اعتراض مگر پارلیمنٹ کھولنے کے لیے بےتاب۔ 219516 598408 updates 700x320 1 300x137

Sharing is caring share post
Share this