اعلامیے کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے اسمارٹ لاک ڈاؤن حکمت عملی کے اعلان کے بعد این سی او سی نے ملک بھرکے ہاٹ اسپاٹس کا جائزہ لیا۔

این سی اوسی کی جانب سے کورونا وائرس ٹریسنگ، ٹیسٹنگ، قرنطینہ (ٹی ٹی کیو) حکمت عملی کے تحت 20 شہروں کی نشاندہی کی گئی۔

یہ بھی پڑھیں
رواں ماہ کے آخر تک ملک میں کورونا کیسز کی تعداد 3 لاکھ تک پہنچ سکتی ہے: اسد عمر
کے پی میں کورونا ضابطہ کار کی 5798 خلاف ورزیاں، 122 گاڑیاں اور 239 دکانیں سیل
این سی او سی نے جون میں کورونا وبا کے بڑھنے کا خدشہ ظاہر کردیا
اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ جن شہروں میں کورونا کے حفاظتی اقدامات میں مزید سختی کی جائے گی ان میں اسلام آباد، کراچی، لاہور، کوئٹہ، پشاور، راولپنڈی، فیصل آباد، ملتان، گجرانوالہ، سوات، حیدرآباد، سکھر اور سیالکوٹ شامل ہیں۔

کورونا کے ہاٹ اسپاٹس میں گجرات، گھوٹکی، لاڑکانہ، خیرپور، ڈی جی خان، مالاکنڈ اور مردان بھی شامل ہیں۔

اعلامیے کے مطابق ٹی ٹی کیو حکمت عملی بڑھتے کیسز والے علاقوں کی نشاندہی کے لیے ڈیزائن کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ کورونا وائرس کے حوالے سے بنائے جانے والے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے سربراہ وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر ہیں۔

گزشتہ روز بھی اسد عمر کا کہنا تھا کہ حفاظتی اقدامات سے کورونا پر قابو پایا جاسکتا ہے، موجودہ صورتحال میں کوئی تبدیلی نہ کی گئی تو کورونا کیسز کی تعداد 3 لاکھ تک پہنچ سکتی ہے۔

انہوں نے کہا تھا کہ جون کے آخر تک کورونا مریضوں کی تعداد 3 لاکھ تک پہنچنے کا خدشہ ہے اور موجودہ صورتحال برقرار رہی تو جولائی کے آخر تک کورونا کیسز میں 8 سے 10 گنا تک اضافہ یعنی مریضوں کی تعداد 10 لاکھ تک پہنچ سکتی ہے۔

Islamabad, Karachi, Lahore, Quetta, Peshawar, Rawalpindi are declared hotspots of Corona  اسلام آباد، کراچی، لاہور، کوئٹہ، پشاور، راولپنڈی کورونا کے ہاٹ اسپاٹس قرار 36 1 300x171

Sharing is caring share post